19

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات کامیاب ہو گئے

(آتش نیوز) پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات کامیاب ہو گئے، آئی ایم ایف مشن نے ایگزیکٹیو بورڈ کو پاکستان کو 71 کروڑ ڈالر کی قسط جاری کرنے کی سفارش کر دی۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان اور بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے درمیان پالیسی سطح کے مذاکرات کامیاب ہوگئے ہیں جس کے بعد آئی ایم ایف کی جانب سے پاکستان کو 71 کروڑ ڈالر کی قسط کی ادائیگی کی راہ ہموار ہوگئی ہے۔
آئی ایم ایف مشن چیف ناتھن پورٹرنے نگراں وزیراعظم کو مذاکرات کی کامیابی سے آگاہ کردیا ہے اور جائزہ مشن نے رپورٹ آئی ایم ایف بورڈ میں پیش کرنے کی یقین دہانی بھی کرادی ہے۔ پاکستان کو 71 کروڑ ڈالر کی اگلی قسط کی ادائیگی کی حتمی منظوری آئی ایم ایف بورڈ دے گا۔

بدھ کے روز نگران وزیر اعظم انوار الحق کاکڑ سے آئی ایم ایف کے مشن چیف ناتھن پورٹر اور پاکستان کیلئے آئی ایم ایف کی ریذیڈنٹ نمائندہ مس ایستھر پیریز نے اسلا م آباد میں ملاقات کی اور انہیں اسٹینڈ بائے معاہدے کے پہلے جائزہ کے تحت حکومتی ٹیم کے ساتھ تکنیکی سطح پر ہونے والے مذاکرات کی صورتحال سے آگاہ کیا۔

وزیر اعظم آفس سے جاری اعلامیہ کے مطابق ناتھن پورٹر نے پروگرام کے سہ ماہی اہداف کو پورا کرنے میں حکومت پاکستان کی کوششوں کا اعتراف کیا۔ انہوں نے کہا کہ ان کوششوں کے نتیجے میں تکنیکی سطح پر بات چیت کا مثبت نتیجہ نکلا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ٹیموں نے اسٹینڈ بائے معاہدے کے مختلف پہلوں پر وسیع تناظر میں بات چیت کی ہے۔ انہوں نے تکنیکی سطح کے مذاکرات میں وزیر خزانہ اور ان کی ٹیم اور گورنر اسٹیٹ بینک کے ساتھ ان کی ٹیم کے کردار کو سراہا۔
وزیراعظم نے پاکستان کے ساتھ جاری کام پر آئی ایم ایف کی ٹیم کا شکریہ ادا کیا اور وزیر خزانہ و محصولات کی قیادت اور پروگرام کو آگے بڑھانے میں ان کی ٹیم کے تعاون کی تعریف کی۔ انہوں نے گورنر اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے کردار کو بھی سراہا۔ وزیر اعظم نے آئی ایم ایف کے ساتھ متفقہ اصلاحاتی کوششوں کے لیے حکومت کے مستقل عزم کا اعادہ کیا جس کا مقصد طویل مدت میں پاکستان کی معیشت کو مستحکم کرنا ہے۔ ملاقات میں میں نگران وفاقی وزیر خزانہ و محصولات، گورنر اسٹیٹ بینک آف پاکستان، چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو اور اعلی سرکاری حکام نے بھی شرکت کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں