42

الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کے انٹرا پارٹی الیکشن کو کالعدم قرار دے دیا

(آتش نیوز) الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی انٹراپارٹی انتخابات سے متعلق محفوظ فیصلہ سنادیا، الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کےانٹراپارٹی انتخابات کو کالعدم قراردیتےہوئے دوبارہ 20 دن میں انتخابات کرانے کی ہدایت کر دی، بلے کا نشان فی الحال پی ٹی آئی کے پاس برقرار رہے گا۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے جمعرات کو محفوظ فیصلہ سنایا گیا ۔
کمیشن نے پی ٹی آئی انٹراپارٹی انتخابات سے متعلق فیصلہ 13 ستمبر کو محفوظ کیا تھا۔ فیصلے میں تحریک انصاف کے انٹراپارٹی انتخابات کو کالعدم قرار دیتےہوئے انہیں ہدایت کی ہے کہ وہ 20 دن کے اندر انتخابات کرواکراس سے اگلے 7 روز میں رپورٹ جمع کرائے۔فیصلے میں کہاگیا کہ تحریک انصاف کی جانب سے کرائے گئے انٹراپارٹی انتخابات شفاف نہیں تھے۔

یہ انتخابات متنازع تھے۔ فیصلے میں یہ بھی کہا گیا کہ بلے کا نشان فی الحال پی ٹی آئی کے پاس برقرار رہے گا تاہم 20 دن کے اندر انٹراپارٹی انتخابات نہیں کروائے اور اس سے اگلے 7 دن میں اس کی رپورٹ الیکشن کمیشن کو جمع نہیں کرائی تو ان سے بلے کانشان واپس لے کر مزید کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کو پارٹی میں ردوبدل اور انٹرا پارٹی انتخابات پر نوٹس جاری کیا تھا ۔
تحریک انصاف نے الیکشن کمیشن سے محفوظ شدہ فیصلہ جلد از جلد سنانے کی دارخوست کی تھی۔قبل ازیں یرسٹر علی ظفر نے پی ٹی آئی کے انٹراپارٹی الیکشن سے متعلق تحریری فیصلہ تبدیل ہونے کا خدشہ ظاہر کر دیا تھا۔ رہنما پی ٹی آئی نے کہا کہ پی ٹی آئی کے انٹراپارٹی الیکشن سے متعلق الیکشن کمیشن نے ہمارے حق میں فیصلہ سنایا مگر تحریری فیصلہ روک لیا۔
پی ٹی آئی کے رہنما بیرسٹر علی ظفر نے کہا کہ الیکشن کمیشن سے انٹرا پارٹی الیکشن پر نوٹس آیا تھا، انٹرا پارٹی الیکشن ہوئے تھے، ریکارڈ الیکشن کمیشن میں پیش کیا، الیکشن کمیشن نے انٹرا پارٹی الیکشن پر فیصلہ سنادیا تھا۔پی ٹی آئی کے رہنما نے مزید کہا کہ انٹرا پارٹی الیکشن پارٹی کے پرانے آئین کے مطابق ہوئے تھے، الیکشن کمیشن نے زبانی حکم تبدیل کیا تو یہ حیران کن ہوگا، الیکشن کمیشن نے کہا تو دوبارہ انٹرا پارٹی الیکشن کرادیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں